شیعہ اثنا عشریہ کا مسلمانوں کی تکفیر کرنا اور ان سے حقد وحسد کرنا

شیعہ اثنا عشریہ کا مسلمانوں کی تکفیر کرنا اور ان سے حقد وحسد کرنا

 شیعہ اثناعشریہ کہتے ہیں کہ:

ائمہ اثنا عشریہ اور ان کے پیروکارشیعہ امامیہ کے علاوہ کوئی ملّت اسلام پر نہیں ہے۔

(دیکھیں: کتاب (أصول الکافي) للکلینی،۱؍۲۲۳،۲۲۴)۔

 اسی طرح وہ کہتے ہیں کہ:

امام مہدی عنقریب واپس آئیں گے اور شیعوں کے دشمن اہل اسلام سے انتقام لیں گے،رہی بات یہود ونصاریٰ کی تو ان سے وہ مصالحت ومسالمت کرلیں گے۔

(دیکھں: کتاب(بحار الأنوار) للمجلسی،۵۲؍۳۷۶)۔

 اسی طرح وہ کہتے ہیں کہ:

ہماری تردید کرنے والا گویا اللہ کی تردید کرنے والا ہے، اور یہ شرک باللہ کی حد تک پہنچا ہواہے۔

(دیکھیں: کتاب(أصول الکافي) للکلینی۱؍۶۷)۔

 اسی طر ح وہ کہتے ہیں کہ:

شیعہ کے علاوہ سارے لوگ اولاد زنا ہیں۔

(دیکھیں: کتاب(الروضۃ من الکافي) للکلینی،۸؍۲۸۵)۔

 اسی طرح وہ کہتے ہیں کہ:

جوبھی بچہ پیدا ہوتا ہے ابلیسوں میں سے کوئی نہ کوئی ابلیس اس کے پاس حاضر رہتا ہے، پس اگر اسے پتہ چلتا ہے کہ یہ نومولود شیعہ میں سے ہے تو اسے اس شیطان سے روک دیتا ہے،اور اگر یہ نومولود شیعہ کی جماعت سے نہیں ہوتا تو شیطان اس کی شرمگاہ میں اپنی انگلی کو داخل کرتا ہےچناں چہ وہ مابون(متّہم) ہوجاتا ہے اور اسی طرح لونڈی کی شرمگاہ میں انگلی داخل کرتا ہے تو وہ فاجرہ وبدکارہوجاتی ہے۔

(دیکھیں: کتاب(تفسیر العیاشي) محمد العیاشی،۲؍۲۱۸)۔

 اسی طرح وہ کہتے ہیں کہ:

 اگر کوئی شخص شیعہ اثناعشریہ نہیں ہے، یا ائمہ اثنا عشریہ میں سے کسی ایک پر ایمان نہیں رکھتا، یا ان میں سے کسی کا بھی انکار کرتا ہے تو وہ کافر ہے،اور آخرت میں اس کا ٹھکانہ جہنم ہوگا۔

(دیکھیں:کتاب(جامع أحادیث الشیعۃ) للبروجردی، ۱؍۴۲۹)۔

 اسی طرح وہ کہتے ہیں کہ:

اخبار سے زیادہ سے زیادہ یہی معلوم ہوتا کہ آخرت میں کافر اور مشرک کا حکم ہراس شخص پر جاری ہوگا جو اثناعشریہ میں سے نہیں ہوگا۔

(دیکھیں: کتاب( تنقیح المقال) لعبد اللہ المامقانی،۱؍۲۰۸)۔