حضرت عمر کھڑے ہو کر پیشاب کرتے تھے۔ (کشف الغمہ)

سیدنا عمر رضی اللہ عنہ پر شیعہ روافض کا الزام نمبر۔5

🔺شیعہ الزام👇👇
حضرت عمر کھڑے ہو کر پیشاب کرتے تھے۔
(کشف الغمہ)

🔹(الجواب اہلسنّت)🔹
کشف الغمہ کا یہ پورا صفحہ جو شیعہ تحقیقی دستاویز پر عکس میں دیا گیا اس پورے صفحہ میں کسی کونے میں یہ نہیں لکھا ہوا کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ کھڑے ہو کر پیشاب کر تے تھے یا انہوں نے کھڑے ہو کر پیشاب کیا ہے یا اسے جائز کہا یا کسی کو اس کی اجازت دی، :

🔸یہ شیعہ دماغ کی کرشمہ سازی ہے جو بات کا بتنگڑ بنانا جانتے ہیں اس صفحہ میں یہ تو ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کبھی (بوجہ مجبوری ) کھڑے ھو کر پیشاب کر لیتے تھے ابن عمر رضی اللہ عنہ نے کھڑے ہو کر پیشاب کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ایسا کرنے سے منع فرما دیا مگر محترم حضرات آپ یقین جانیے ایک جملہ بھی اس صراحت کو بیان کرنے والا یہاں موجود نہیں جس میں ھو کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے کھڑے ہو کر پیشاب کیا یا وہ کرتے تھے۔ یہ ہے کرم فرماؤں کی عیاری کہ جس بات کا وجود ہی نہ ہو وہ اسے بھی پیدا کرنے کی مہارت رکھتے ہیں حضرت عمر رضی اللہ عنہ کا اگر کوئی قول کھڑے ہو کر پیشاب کرنے کی صورت میں مثبت یا منفی منقول ہو کہ کھڑے ہو کر اگر کوئی پیشاب کرے تو اس کے جسم کا کوئی حصہ مستور رہتا ہے تو اس کا یہ مطلب ہرگز نہیں بنتا کر حضرت عمر رضی اللہ عنہ کھڑے ہو کر پیشاب کرتے تھے.

خرد کا نام جنوں رکھ دیا جنوں کا خرد
جو چاہے تیرا حسن کرشمہ ساز کرے