حسنین کریمین کی بیعت: شیعہ کتاب رجال کشی سے ثبوت

شیعہ کی معتبر کتاب میں لکھا ہوا ہے کے جناب جعفرصادق رحہ فرماتے ہیں کہ امیر معاویہ رضہ نے حضرت سیدنا حسن کی طرف مکتوب ارسال کیا کہ آپ اور آپ کے برادرحضرت حسین اور حضرت علی رضہ کے دیگراحباب ہمارے ہماں تشریف لائیں-

جب یہ حضرات امیر معاویہ رضہ کے ہاں جانے کے لیے روانہ ہوئے تو ان کے ہمراہ قیس بن عبادہ انصاری رضہ بھی روانہ ہوئے-

یہ حضرات ملک شام میں حضرت امیرمعاویہ رضہ کے پاس تشریف لے گئے تو امیرمعاویہ نے انھیں اندرآنے کی اجازت دی وہاں اس مجلس میں کئی خطباء جمع کیے گئے تو امیر معاویہ رضہ نے حضرت حسن رضہ سے کہا کہ آپ اٹھیے اور بیعت کیجیے پس حضرت حسن رضہ اٹھے اور انھوں نے حضرت معاویہ کی بیعت کی-

اس کے بعد امیرمعاویہ رضہ نے حضرت حسین رضہ سے کہا آپ بھی اٹھیں اوربیعت کریں پس حضرت حسین اٹھے اورامیرمعاویہ سے بیعت کی-

اس کے بعد امیرمعاویہ نے قیس بن عبادہ سے کہا آپ بھی اٹھیں اور بیعت کریں-حضرت قیس رضہ نے حضرت حسین رضہ کی طرف التفا کیا کہ حضرت حسین رضہ اس مسئلہ میں کیا حکم دیتے ہیں؟؟توحضرت حسین رضہ نے فرمایا اے قیس !حسن میرے بھی امام ہیں (جب انھوں نے بیعت کی ہے تو آپ بھی بیعت کرلیں)

شیعہ مذھب کی معتبر ترین کتاب اختیار معرفة المعروف رجال الکشی صفحہ نمبر104

* ذکرقیس بن عبادہ سعد *

 صاف اسکین ڈاؤن لوڈ کریں

اسکین 1

اسکین 2