اللہ کے مجاھد ، فرماں روا صحابہؓ

کون صحابہؓ

وہ فاتحانِ عالَم، وہ سرفروش غازی

اللہ کے مجاھد ، فرماں روا صحابہؓ

اسلام کےاُفق پر وہ ضوفشاں ستارے

تھے عرصۂ وَغا میں وہ ضیغمانِ غابہ

اِک دوسرے سے باہم احسان اورمروّت

بےلوث و بے محابہ، بے میل و بے قرابہ

دارالسلام ھے اب ارضِ فرات و دجلہ

روندا ھواھے اُنکاوہ خُون فشاں دوآبہ

کیا قصر ہائے قیصر کیا کاخ ہائےکسرٰی

یلغارِ غازیاں کا… شاھد ھے ہر خرابہ

اُنکےوضوکےقطرےلعل وگوھرسےخوشتر

تھا جامِ جَم سے بڑھ کر … مٹی کا آفتابہ

روشن ہیں اُنکے دم سےتاریخ کے دفاتر

اعلام و البدایہ ………طبقات و الاصابہ

درخشاں ہیں اس اُفق پریُوں خامۂ غضنفر

جیسےٹھہر گیاھو…………… اُڑتا ھوا شہابہ

اُن محسنانِ دین پرکیوں ھوعلیمؔ جائز

جُہَّالِ کَج زبان کی………لغویت و عرابہ